پاکستانی خاتون گوگل کمپنی کو خیرآباد کہہ کر وزیراعظم آفس میں کام کرنے کو تیار

0
91
women employ of google company  join prime minister office
پاکستانی خاتون گوگل کمپنی کو خیرآباد کہہ کر وزیراعظم آفس میں کام کرنے کو تیار

پاکستانی خاتون تانیہ شاہد گوگل کمپنی کو خیرآباد کہہ کر وزیراعظم ہاؤس میں کام کرنے کو تیار ہو گئیں۔ وفاقی حکومت کے ڈیجیٹل پیمنٹ سسٹم متعارف کروانے کے فیصلے کے بعد قابل پاکستانی خاتون تانیہ شاہد معیشت اور تمام حکومتی اداروں کی ڈیجیٹلائزیشن کے لیے کام کریں گی۔اس حوالے سے میڈیا رپورٹس میں بتایا گیا ہے کہ وفاقی حکومت نے ملکی معیشت سے متعلق ایک اور بڑا فیصلہ کرتے ہوئے ڈیجیٹل پیمنٹ سسٹم متعارف کروانے کا فیصلہ کیا یے۔

پاکستان تحریک انصاف کے رہنما جہانگیر ترین کا کہنا ہے کہ کافی محنت اور تگ و دو کے بعد گوگل سے منسلک ایک انتہائی قابل پاکستانی خاتون کو معیشت اور تمام حکومتی اداروں کی ڈیجیٹلائزیشن کے لیے آمادہ کر لیا ہے

وہ انشاء اللّه جلد پاکستان آ کر اپنا کام شروع کریں گی۔ جہانگیر ترین نے کہا کہ تانیہ شاہد اس سے قبل سنگا پور میں گوگل کمپنی میں کام کر رہی تھیں

تاہم اب وہ گوگل کمپنی کو خیبر آباد کہہ کر پاکستان آئیں گی اور وزیراعظم آفس میں اپنی خدمات سر انجام دیں گی۔سنگاپور میں گوگل کمپنی کی سینئر ایگزیکٹو سے معاملات طے پاگئے ہیں۔تانیہ شاہد وزیراعظم ہاؤس میں تمام حکومتی اداروں کی ڈیجیٹلائزیشن کے لیے کام کریں گی۔ جہانگیر ترین نے کہا ہے کہ خاتون وزیراعظم آفس سے ڈیجیٹلائزیشن سسٹم کی سربراہی کریں گی۔

وزیراعظم آفس میں اسٹریٹیجک ریفارمس یونٹ قائم کردیا گیا ہے ۔پروفیشنل ٹیم ریفارمز پر عملدرآمد اور ڈیٹا بیس کو مانیٹر کرے گی ۔انہوں نے کہا کہ کاروبار کے لیے رقوم کی ادائیگی کا نظام ڈیجیٹلائز اور آسان کریں گے۔انہوں نے کہا کہ ڈیجیٹیل پیمنٹ سسٹم ٹھیک نہ کیا تو ہم کچھ نہیں کر سکیں گے ۔جہانگیر ترین نے مزید کہا کہ ڈیجیٹلائزیشن کا خیال وزیراعظم عمران خان کا تھا۔اس سسلسلے میں گورنر سٹیٹ بینک سمیت اہم اداروں کو اعتماد میں لے لیا گیا ہے۔

LEAVE A REPLY