وکیل کے ہاتھوں تھپڑ کھانے والی لیڈی کانسٹیبل نے انصاف نہ ملنے پر پولیس کی نوکری سے ہی استعفی دے دیا

0
54
 lawyer slap on lady constable

تفصیلات کے مطابق فیروزوالہ کچہری میں ڈیوٹی کے دوران طاقت کے نشے میں چوُر وکیل احمد مختار سے تھپڑ کھانے والی لیڈی کانسٹیبل فائزہ نے اپنے ہی محکمے کے ہاتھوں دھوکا کھانے اور انصاف نہ ملنے پر نوکری سے استعفیٰ دے دیا ہے۔

اس حوالے سے اپنے وڈیو بیان میں فائزہ نے کہا کہ میں نوکری عوام کی خدمت کرنے کے لیے کر رہی تھی لیکن مجھے ذہنی تشدد کا نشانہ بنایا جارہا ہے، میں کمزور عورت ہوں جو میرا جرم ہے۔ اس مافیا کا مقابلہ نہیں کرسکتی۔  سمجھ نہیں آرہی کہ کہاں جاؤں یا خودکشی کرلوں۔ ریاست مدینہ پاکستان میں مجھے انصاف ملتا نظر نہیں آرہا، اس لئے محکمہ پولیس سے استعفی دے رہی ہوں۔

واضح رہے کہ فیروزوالہ کچہری میں ڈیوٹی پر موجود لیڈی کانسٹیبل کو وکیل احمد مختار نے بدتمیزی کا مظاہرہ کرتے ہوئے تھپٹر مارا اور گالی گلوچ کی جب کہ پولیس نے اپنی ہی ساتھی کانسٹیبل سے ہاتھ کر دیا۔ ڈی پی او شیخوپورہ نے واقعے کا نوٹس لیتے ہوئے مقدمہ درج کرنے کا حکم دیا تھالیکن سب انسپکٹر نے اندراج مقدمہ کے وقت غیر ذمے داری کا مظاہرہ کیا اور وکیل کا نام احمد مختار کے بجائے احمد افتخار لکھ دیا۔ عدالت نے ملزم کو ضمانت پر رہا بھی کردیا ہے۔

LEAVE A REPLY